میں لُٹا ہوں اس طرح
کہ کیا گیا ہوں ریزہ ریزہ
مگر افسوس نہیں مجھے
بنوں گا میں بھی پاکستان

مجھے توڑا گیا بے انتہا
کہ مت پوچھو ظلم کی انتہا
مگر افسوس نہیں مجھے
بنوں گا میں بھی پاکستان

مجھے کاٹو گے کب تک تم
کہ دھر بانتوں گے کب تک تم
نہیں افسوس نہیں مجھے
بنوں گا میں بھی پاکستان

ہاں لے لو بوند بوند خون
لبوں پر ہو گا یہی مضمون
بنوں گا میں بھی پاکستان
بنوں گا میں بھی پاکستان

از صائمہ اعجاز